شاداب خان کو بابراعظم کی کمی ستانے لگی ، کتنا ضروری سمجھتے ہیں بتا دیا

میچ کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے ٹی ٹونٹی میں شکست کے بعد کپتان شاداب خان کا کہنا تھا کہ ہماری ٹاپ آرڈر سپورٹ نہیں کیا اس لیے پریشر بڑھ گیا لیکن اس کے باوجود بھی ہم نے اچھا کم بیک کر لیا تھا۔ اگر ہمارے مجموعی رنز میں20 سے  25 رنز اور ہوتے تو ہم آسانی سے میچ جیت سکتے تھے۔

سپورٹس میڈیا سے پو چھے گئے ائک سوال کے جواب میں شاداب خان نے کہا کہ بابر اعظم پوری ٹیم اور اننگز ایک اچھے پلین کے ساتھ لے کر چلتے ہیں، یقینا ٹیم کو انکی کمی محسوس ہوئی، انک کا کہنا تھا کہ دوسری طرف ٹاپ آرڈر میں فخرزمان کی کارکردگی بھی اہم ہوتی تھی، پاکستان کے نوجوان بلے بازوں نے قومی ٹی ٹوئنٹی کپ اور زمبابوے کیخلاف سیریز میں بہترین پرفارم کیا تھا، نیوزی لینڈ کی پچز اور کنڈیشنز مختلف ہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ میزبان ٹیم اپنی پچز کی تمام تر کنڈیشنز سے واقف تھی ۔ جبکہ ہمارے پاس اتنا ٹائم نہیں تھا کہ پچ کنڈیشن اچھے سے اندازہ کر سکتے اس لیے پچ کے بدلتے موڈ کو سمجھنے میں بھی دشواری اس لیے کو بڑا ہڈف نہیں دے سکے اس کے علاوہ ہماری ٹاپ آرڈر کا بھی نقصان ہوا۔ اگر ہمیں پچ کی کنڈیشنز کا تھیک سے اندازہ ہوتا تو ہم میچ آسانی سے جیت سکتے تھے۔ انھوں نے کہا اب پچ کے موڈ سے واقف ہو گئے انشا۶ اللہ اگلے میچ میں کارکردگی بہتر ہوگی۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *