اگر افتخاراور خوشدل کی جگہ ان دو کھلاڑیوں کو بھیجتے,تو پاکستان آسانی کے ساتھ میچ جیت جاتا

تیسرا ون ڈے انٹرنیشنل میچ آج زمبابوے اور پاکستان کے درمیان راولپنڈی میں کھیلا گیا, تیسرا ون ڈے انٹرنیشنل میچ انتہائی سنسنی خیز ثابت ہو, شائقین کو کافی عرصے بعد ایک شاندار مقابلہ دیکھنے کو ملا, زمبابوے نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا, مقررہ 50 زمبابوے کی ٹیم نے 278 رنز بنائے..

پاکستان کی شروعات اچھی نہ تھی,ابتدائی چار وکٹیں جلدی گر گئیں, بابر اعظم, وہاب ریاض اور خوشدل شاہ نے بہترین کھیل کا مظاہرہ کیا, موسی خان نے اوور کی آخری گیند پر چوکا لگا کر میچ برابر کر دیا,میچ کا فیصلہ سپر اوور پر چلا گیا.

پاکستان نے سپر اوور میں پہلے بیٹنگ کی, پاکستان کی طرف سے افتخار احمد اور خوشدل شاہ میدان میں آئے مگر بد قسمتی سے دونوں کھلاڑیوں صرف 2 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے,آئی سی سی قوانین کے مطابق اگر سپر اوور میں 2 کھلاڑی آؤٹ ہو جائیں تو اننگز ختم کر دی جاتی ہے,عوام نے افتخار احمد اور خوشدل کو بھیجنے کے فیصلے کو سوشل میڈیا پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے.

سوشل میڈیا پر اکثر لوگوں کی یہ رائے تھی کہ بابر اعظم خود اور ساتھ میں حیدر علی کو بیٹنگ کیلئے لے آتے, حیدر علی نوجوان کھلاڑی ہے اور اچھا ہٹر بھی ہے اور بابر اعظم نے بھی سنچری بنا رکھی تھی اور فارم میں تھے,اگر بابر اعظم اور حیدر علی بیٹنگ کرنے کیلئے آ جاتے تو پاکستان ایک اوور میں اچھا ٹوٹل سیٹ کر سکتا تھا, اور پاکستان میچ آسانی سے جیت جاتا..

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *