دسمبر اور جنوری پاکستانی سیاست کے لیے انتہائی اہم

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) دسمبر اور جنوری 2021تک درجنوں سیاسی رہنما بھارتی ایجنڈا پر کام کرنے کے حوالہ سے گرفتار کرلیے جائیں گے،پیر پنجر کی پیشنگوئی سچ ہونے کے قریب قریب پہنچ گئی،جنوری 2021کے بعد حکومت سکون کا سانسلے گی،2023میں صدارتی نظام قائم کرنے پر کام تیز رفتاری سے شروع کر دیا جائے گا،

اگلی حکومت صدارتی نظام کے تحت ہی معرض وجود میں آئے گی۔یادرہے پیر پنجر سرکار نے کو ایک ماہ قبل آن لائن سے ایک خصوصی گفتگو میں پیشن گوئی کی تھی کہ ملک کے سیاسی نظام میں دسمبر اور جنوری انتہائی اہمیت کا حامل ہے اور بھارت نوازبیانیہ تقویت پکڑے گا،پیر پنجر کے مطابق ملک دشمن بیانیہ کو لیکر چلنے والے بیشتر افراد جیل چلے جائیں گے اور پی ڈی ایم کے غبارے سے ہوا نکل جائے گی،

انہوںنے یہ بھی کہا کہ صدارتی نظام 2023میں نافذ کرنے کے لیے مہم زور پکڑے گی اور اگلا الیکشن صدارتی نظام کے تحت ہو گا اور ملک کی تقدیر بدلنا صدارتی نظام میں ہی ہے۔دوسری جانب مسلم لیگ(ن) پنجاب کی سیکرٹری اطلاعات عظمیٰ بخاری نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی ”الف ،ب اور ج ”تلاش کرتے کرتے اڈیالہ اور اٹک جیل جائے گی،فارن فنڈنگ کیس پوری پی ٹی آئی کو ہی کالعدم قراردے گا،

شریف فیملی پہلے سے زیادہ مضبوط اور متحد ہے،ریلوکٹے ،کیڑے مکوڑے اور فصلی بٹیرے دسمبر تک باری باری منظر عام سے غائب ہو جائیں گے،نوازشریف ،شہبازشریف ،مریم نواز اور حمزہ شہباز چٹان کی طرح مضبوطی سے کھڑے ہیں۔عظمیٰ بخاری نے فیاض چوہان کے بیان پرر دعمل میں کہاکہ شریف خاندان کو کمزور کرنے کیلئے خواتین کو عدالتوں میں چکرلگوائےجارہے ہیں۔کم ظرف حکمران ذاتیات کے چکر میں اخلاقیات کو پس پشت ڈال چکے ہیں۔بہت جلد علیمہ خان سے بھی سلائی مشینوں سے کمائے اربوں روپے کی پراپرٹی کا بھی حساب لیا جائے گا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.