ایک سبق آموز واقعہ جب ایک انتہائی خوبصورت لڑکی نے شادی سے انکار کر دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) مجھ سے شادی کرنا جائز نہیں،ایک سبق آموز واقعہ، خیزران بنت عطا، خلیفہ مہدی کی لونڈیوں میں سے ایک تھی- اس کا تعلق یمن سے تھا- یہ بہت عقلمند کنیز تھی، فقہی مسائل کے استنباط میں اسے دسترس حاصل تھی کیونکہ امام اوزاعی سے اس نے فقہ کا علم حاصل کر رکھا تھا-

اس کی ذہانت و فطانت کو دیکھ خلیفہ مہدی نے اسے آزاد کرکے اپنی زوجیت میں شامل کرلینا چاہا مگر خیز ران نے اس سے کہا: آپ مجھ سے شادی نہ ہی کریں تو بہتر ہے، کیونکہ آپ کے لیے مجھ سے شادی کرنا جائز نہیں! خلیفہ کو اس کے جواب پر بڑا تعحب ہوا- ایک حاکم وقت ایک لونڈی کو پیغام نکاح دے اور وہ اس پر چون و چرا سے کام لے- خلیفہ مہدی نے خیوران سے پوچھا: آخر تم میری بیوی کیوں نہیں بن سکتی، جبکہ تم پہلے سی ہی میری لونڈی ہو؟خیزران نے جواب دیا : (( لا یحلّ لک ان تتزوج علی)) ” آپ کے لیے مجھے کسی کی سوکن بننا جائز نہیں-” خلیفہ مہدی نے جب خیزران سے شادی کے لیے اصرار کیا تو اس نے کہا: کسی عامل دین سے پوچھ لیں کہ آپ کے لیے مجھے سے شادی کرنا کیوں جائز نہیں؟ خلیفہ مہدی نے کہا: کیا تم سفیان ثوری کے فتوای سے راضی ہو؟ خیزران نے کہا: کیوں نہیں، میں ان کے فتوای سے مطمعن ہو جاؤں گی- خلیفہ مہدی نے امام سفیان ثوری سے اس سلسلہ میں گفتگو کی اور انہیں بتایا آخر میرے لیے اپنی ایک لونڈی کو اپنی ازواج کی فہرست میں شامل کرنا کیوں جائز نہیں، جبکہ خود اللہ کا ارشاد گرامی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.