ناصر جمشید کی رہائی کے آرڈر روک دئیے گئے

تفصیلات کے مطابق اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ سابق اوپنر ناصر جشمید کو برطانیہ کی جیل سے رہائی نہ مل سکی، سابق کرکٹر کی سزا کی مدت آج مکمل ہونی تھی۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق برطانوی ہوم آفس نے سابق پاکستانی کرکٹر کی رہائی کے آرڈر روک دئیے۔

ناصر جمشید کو برطانیہ سے ڈی پورٹ کیے جانے کی کارروائی کا سامنا ہے، برطانیہ میں 12 ماہ سے کم سزا یافتہ شخص کو ڈی پورٹ نہیں کیا جاتا جبکہ ناصر جمشید کو عدالت نے اسپاٹ فکسنگ کیس میں 17 ماہ سزا سنائی تھی۔

یاد رہے کہ 7 فروری کو سابق کرکٹر ناصر جمشید اور ان کے ساتھیوں یوسف انور، محمد اعجاز کو گرفتار کیا گیا تھا۔

ناصر جمشید کو 17 ماہ، یوسف انور کو ساڑھے تین سال اور اعجاز احمد کو ڈھائی سال کی سزا سنائی گئی تھی، تینوں مجرمان کو کمرہ عدالت سے گرفتار کیا گیا تھا۔

کراؤن کورٹ میں ٹرائل کے دوران ناصر جمشید نے اپنے اوپر عائد الزامات کا اعتراف بھی کیا تھا، انہوں نے عدالت کو بتایا تھا کہ ساتھی کرکٹرز کو بھی میچ فکسنگ کرنے پر اکسایا تھا۔

خیال رہے کہ اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں پی سی بی کی جانب سے پہلے ہی ناصر جمشید پر دس سال کی پابندی عائد کی جا چکی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.