محمد عامر اپنے کیریر میں،تکلیف دہ لمحات کے بارے میں بات کرتے ہوےرو پڑے

محمد عامر نے انگلینڈ روانگی سے قبل بتایا ہے کہ پہلے میچ میں مجھے شدید سردرد تھا۔ میں دوائی کھا کر کھیل رہا تھا، میں نے چار اوورز میں تین کھلاڑی آؤٹ کردیے تھے لیکن مجھے شدید تکلیف شروع ہو گئی۔

یں باہر چلا گیا اور دو تین دن تک شدید تکلیف میں رہا اور جب میں چار دن بعد ہسپتال گیا تو پتا چلا کہ میں مر نے والی حالت میں ہوں ، مجھےڈینگی ہے۔ محمد عامر نے بتایا کہ

مجھے ایک رات 27 بوتلیں لگیں لیکن اس بات کا کسی کو نہیں پتا۔ میری حالت ایسی تھی کہ ڈاکٹروں نے کہہ دیا تھا کہ دعا کریں یہ بچ جائے، اسےڈینگی لاسٹ سٹیج پر ہے۔ انہوں نے بتایا کہ

اگلے روز ہمیں کوالالمپور جانا تھا لیکن ڈاکٹر اجازت نہیں دے رہا تھا پھر ہمارے ڈاکٹر نے لکھ کر انہیں دیا کہ یہ وہاں جاتے ہی ہسپتال میں داخل ہو جائے گا

Sharing is caring!

Comments are closed.