آسٹریلیا کے مچل مارش آئی پی ایل اور اپنی فرنچائزپر شدید برہم

آئی پی ایل کے دوران متحدہ عرب امارات میں تیار کی جانیوالی اپنی انجری رپورٹ کے بارے میں نہ تو میں آگاہ ہوں نہ ہی کرکٹ آسٹریلیا کو کچھ ملا ہے: آل رائونڈر

پرتھ (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔ 3 اکتوبر 2020ء ) آسٹریلیا کے فاسٹ بائولر مچل مارش آئی پی ایل انتظامیہ اور اپنی فرنچائز سن رائزرز سے شدید مایوس اور پریشان ہوگئے ہیں ۔ مچل مارش نے پرتھ سے ایک ورچوئل پریس کانفرنس میں بتایا ہے کہ آئی پی ایل 2020ء کے دوران متحدہ عرب امارات میں تیار کی جانے والی اپنی انجری رپورٹ کے بارے میں نہ تو میں آگاہ ہوں اور نہ ہی کرکٹ آسٹریلیا کو کچھ ملا ہے۔
مچل مارش پرتھ میں 14 روزہ قرنطینہ میں ہیں ،انہوں نے لیگ اور فرنچائز کے اس رویہ کو اجنبی قرار دیا ہے۔ مارش نے انکشاف کیا ہے میں سچ میں بول رہا ہوں کہ نہیں معلوم کہ متحدہ عرب امارات میں اسکیننگ رپورٹ کیا رہی ہے،مجھے نہیں علم اور کرکٹ آسٹریلیا کو بھی نہیں بتایا گیا ہے اور یہ ایک عجیب و غریب صورتحال ہے۔

مچل مارش سن رائزرزحیدرآباد کے پہلے ہی میچ میں ٹخنے کی انجری کا شکار ہوئے اور واپس اپنے ملک سدھار گئے۔

انہوں نے کہا کہ 4 بالز کے بعد گرائونڈ سے باہر ہونا واقعی مایوس کن ہے لیکن میں نے اپنے کیریئر میں شاید ہزار بار اس طرح کی بال کو ڈائیو کرکے روکنے کی کوشش کی ہوگی،کبھی اس طرح زخمی نہیں ہوا جیسا کہ اب ہوا ہوں۔میں نے یو اے ای میں تکلیف سے 48 گھنٹے تک چیخ و پکار کی اور آہیں بھری ہیں، یہ ایک عجب بات ہے لیکن میں برے وقت سے نکل رہا ہوں،مجھے امید ہے کہ میں ڈومیسٹک کرکٹ کے کچھ میچز کے لئے فٹ ہوجائوں گا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *