مولانا فضل الرحمان کے اثاثوں سے متعلق غلط خبریں چلانے پر جے یو آئی نے کیا بڑا قدم اٹھا لیا ؟ جان کر سب حیران پریشان

اسلام آباد (ویب ڈیسک)جمعیت علماء اسلام (ف)نے پارٹی سربراہ مولانا فضل الرحمان کے خلاف اثاثوں سے متعلق غلط خبریں چلانے پر ٹی وی چینلز کے خلاف کارروائی کیلئے پیمرا سے رجوع کرلیا۔نجی ٹی وی کے مطابق جمعیت علمائے اسلام ف کے رہنماؤں سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری، شاہدہ اختر علی، مفتی ابرار احمد نے پارٹی سربراہ مولانا فضل الرحمان

کے خلاف اثاثوں سے متعلق غلط خبریں چلانے پر ٹی وی چینلز کے خلاف کارروائی کیلئے پیمرا سے رجوع کرلیا۔جے یو آئی رہنماؤں کی جانب سےپیمرا کو باضابطہ تحریری درخواست دیدی گئی ہے۔درخواست کے متن میں کہا گیا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کے اثاثوں سے متعلق نشر ہونے والی تمام خبریں بے بنیاد ہیں ، نیب نے مولانا فضل الرحمان کے اثاثوں سے متعلق کوئی پریس ریلیز جاری نہیں کی،اثاثوں سے متعلق غلط خبریں نشر کرنا نہ صرف غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام ہے بلکہ پیمرا قوانین کے بھی خلاف ہے۔ اثاثوں سے متعلق غلط خبریں نشر کرنے والے ادارے ثبوت فراہم کریں۔ ثبوت فراہم نہ کرنے والے اداروں کے خلاف پیمرا قوانین کے مطابق کاروائی کی جائے۔اس سے قبل جے یو آئی کی جانب سے مولانا فضل الرحمان سے متعلق غلط خبریں چلانے والے ٹی وی چینلز مالکان کو ایک ایک ارب روپے کے ہرجانے کے قانونی نوٹسز بھی دیئے جا چکے ہیں۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جمہوری وزیراعظم ہوں کس کی جرات ہے کہ مجھ سے استعفیٰ مانگ،اگر مجھ سے ڈی جی آئی ایس آئی استعفیٰ مانگتا تومیں فارغ کردیتا، آرمی چیف نے مجھ سے پوچھ کر اپوزیشن سے ملاقات کی تھی۔وزیراعظم عمران خان نے سماء نیوز کو انٹرویودیتے ہوئے کہا کہ ماضی میں اگر کسی نے غلطی کی تو کیا ہم آرمی کو گالیاں دیتے رہیں،اب پاکستانی فوج بدل گئی،موجودہ حکومت اور پاک فوج کے درمیان تاریخی تعلقات ہیں، نوازشریف کو ہمیشہ افواج پاکستا ن کے ساتھ مسئلہ رہا کیونکہ آئی ایس آئی ان کی چوری پکڑ لیتی ہے۔نوازشریف جس فوج کو گالیاں دے رہے ہیں اسی کے سہارے یہ سیاست میں آئے تھے، ان لوگو ں نے عدالتوں پر حملے کیے ، عدلیہ کو بلیک میل کیا۔ایک سوال کے جواب میں وزیراعظم نے کہا کہ نوازشریف کہتے ہیں کہ مجھے آئی ایس آئی کے سربراہ نے کہا کہ استعفیٰ دو ، اگر مجھے کہتاتو میں اسی وقت فارغ کر دیتا۔ ادھر یہ کہتے ہیں کہ مشرف نے میرے کہنے کے بغیر حملہ کیا ، اگرمیر ے کہنے کے بغیر آرمی چیف ایسا کرتا تو اسی وقت فارغ کردیتا۔نوازشریف پاکستان کے ساتھ خطرناک کھیل کھیل رہا ہے، یہی کھیل الطاف حسین نے بھی کھیلا تھا۔بھارت ان کی مدد کررہاہے۔کیونکہ بھارت پاکستان میں فساد پھیلانا چاہتا ہے۔ اگر پاک فوج نہ ہوتی پاکستان کے تین ٹکڑے ہوچکے ہوتے۔وزیراعظم نے کہا کہ یہ لوگ مجھ پر دباﺅ ڈال کر این آراو لینا چاہتے ہیں ،میں اقتدار چھوڑ دوں گا لیکن ان کو این آرو نہیں دوں گا۔نوازشریف جھوٹ بول کر باہر گئے،ہمیں تو یہ بتایا گیا تھا کہ اگر علاج کے لیے باہر نہ بھیجا گیا تو یہ کسی بھی وقت مرسکتا ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *