خدا کی قُدرت۔۔!! غلافِ کعبہ کی تبدیلی کے دوران روح پرور مناظر، آسمان سے رحمتیں نازل ہونا شروع، عازمین ِحج کے چہرے خوشی سے کھل اُٹھے

مکہ مکرمہ (نیوز ڈیسک ) غلاف کعبہ کی تبدیلی کے موقع پر قدرت مہربان ہوں گئی۔مکہ مکرمہ، منیٰ اور عرفات میں بارانِ رحمت ہوئی جس سے حجاج کرام کے چہرے کھل اُٹھے۔مکہ مکرمہ میں خانہ کعبہ کو غسل دینے اور تبدیلی غلاف کعبہ کی پروقارتقریب ہوئی۔حرمین شریفین کے امور کے سربراہ شیخ

عبدالرحمان السدیس نے اس تقریب کی نگرانی کی۔بتایا گیا ہے کہ تقریب میں کلید بردار کعبہ،منتظمین،سعودی حکام اور غلاف ساز کسوہ فیکٹری کے ذمہ دار بھی شریک ہوئے۔خانہ کعبہ کو غسل دینے کے بعد خالص سونے، چاندی کی تاروں اور خالص ریشم سے تیار کردہ غلاف کعبہ تبدیل کیا گیا۔غلاف کی تیاری میں 700 کلو گرام سے زائد خالص سونا ،چاندی اور 675 کلو گرام خالص ریشم استعمال کی گئی۔غلاف کعبہ کی لمبائی پچاس فٹ اور چوڑائی 35 سے 40 فٹ ہے۔ جب کہ اس کی تیاری پر 24 ملین سعودی رالچ لاگت آئی۔غلاف کعبہ کے چار کونوں پر سورۃ اخلاص منقش ہے۔جبکہ مختلف آیات پر مشتمل 16 پٹیاں الگ الگ سے جڑی ہیں۔غلاف کعبہ کو مکہ مکرمہ کی دارالکسوہ فیکٹری میں تیار کیا گیا۔یہ کارخانہ ہر سال بیت اللہ کا ایک نیا غلاف تیار کرتا ہے جسے 9 زی الحج کو پورے تزک و احتشام کے ساتھ خانہ کعبہ کی زینت بنایا جاتا ہے۔واضح رہے کہ مناسک حج کا آغاز ہو گیا مکہ مکرمہ سے عازمین حج کے قافلے بدھ کو صبح سویرے منیٰ پہنچے۔ اس سال فریضہ حج ادا کرنے والوں کا تعلق 160 ملکوں سے ہے ان میں ستر فیصد غیر ملکی ہیں۔منیٰ جہاں ہر سال خیموں کا شہرآباد ہوتا ہے اس سال کورونا وائرس کے باعث محدود حج کے باعث ایک حصہ ہی آباد ہوگا۔ سعودی وزارت حج و عمرہ نے اس سال فریضہ حج کی سعادت حاصل کرنے والے مقیم غیرملکیوں اور سعودیوں کو مکہ مکرمہ کے ہوٹل سے منیٰ منتقل کیا ہے۔ عازمین حج نے بدھ 8 ذی الحجہ ظہر، عصر، مغرب اورعشا کی نمازیں ادا کیں اور آج( جمعرات 9 ذی الحجہ ) فجر کی نماز ادا کرکے حج کا رکن اعظم وقوف ادا کرنے کے لیے میدان عرفات پہنچیں گے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *