کارکنان کا پروفیشنل ٹیسٹ شروع ہو گیا

سعودیہ میں پاکستانیوں سمیت لاکھوں کارکنان کا پروفیشنل ٹیسٹ شروع ہو گیا
سعودی وزارت افرادی قوت کے مطابق ٹیسٹ میں ناکام ہونے والوں کو آئندہ ورک ویزے جاری نہیں ہوں گے

ریاض( 2 جولائی 2021ء) سعودی عرب میں مقیم لاکھوں کارکنان کی پیشہ ورانہ صلاحیتوں کا جائزہ لینے کے لیے پروفیشنل ٹیسٹ کے پہلے مرحلے کا آغاز ہو گیا ہے۔ اس پروفیشنل ٹیسٹ کے تحت 23 بڑے پیشوں میں کام کرنے والے لاکھوں ہنر مندوں کا ٹیسٹ لیا جائے گا۔ اُردو نیوز کے مطابق وزارت افرادی قوت کا کہنا ہے کہ تدریجی طور پر ہر ادارے کے تکنیکی عملے کا پروفیشن ٹیسٹ ہوگا-پروفیشنل ٹیسٹ کا آخری مرحلہ جنوری 2022 میں انجام دیا جائے گا۔

نائب وزیر افرادی قوت عبداللہ ابو ثنین نے کہا کہ وزارت کی جانب سے مملکت کی لیبر مارکیٹ میں ہنرمندوں کی کارکردگی بہتر بنانے، پیداواری صلاحیت بڑھانے اور نااہل کارکنان کی آمد روکنے کی مہم چلا رہی ہے۔پیشہ وروانہ ٹیسٹ پروگرام کے تحت ایک ہزار سے زیادہ پیشوں کو 23 بڑے پیشوں میں ضم کردیا گیا ہے۔ پروفیشن ٹیسٹ کے دو ٹریک مقرر کیے گئے ہیں- پہلے ہر ہنرمند کا پیشہ ورانہ ٹیسٹ ان کے اپنے ملک میں ہوگا- اس مقصد کے لیے انٹرنیشنل ٹیسٹ سینٹرز کا تعاون حاصل کیا گیا ہے-دوسرا ٹیسٹ سعودی عرب میں مقامی سینٹرز کے تعاون سے کیا جائے گا۔ پہلے مرحلے میں 3 ہزار سے زیادہ کارکنان والے بڑے اداروں اور کمپنیوں کے ہنرمندوں کا پروفیشن ٹیسٹ ہوگا- اس کے بعد 500 سے 2 ہزار 999 تک کارکنان والے اداروں کا رخ کیا جائے گا۔پھر 50 سے 499 والے اداروں کے کارکنان کا نمبر آئے گا- اس کے بعد ان چھوٹے اداروں کے ہنرمندوں کا ٹیسٹ ہوگا جو زمرہ (الف) میں آئیں گے۔یہ وہ ادارے ہوں گے جن کے کارکنان کی تعداد 6 سے 49 تک ہوگی- سب سے آخر میں زمرہ (ب) کے اندرآنے والے چھوٹے اداروں کے ہنرمندوں کا ٹیسٹ لیا جائے گا۔ یہ پانچ اور اس سے کم کارکن والے ادارے ہوں گے۔وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود نے 23 رجب 1442ھ مطابق 7 مارچ 2021 کو وزارت خارجہ اور پیشہ ورانہ و تکنیکی ٹریننگ کے پبلک ادارے کے تعاون سے پروفیشن ٹیسٹ پروگرام جاری کیا تھا-

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*